اردوئے معلیٰ

Search

اس جہانِ مصائب میں غم ہیں بہت ،پھر بھی ایسا نہیں کہ سہارا نہیں

اے حبیبِ خدا احمدِ مجتبےٰ کوئی اور آپ کے بِن ، ہمارا نہیں

 

اک طرف شدتِ جذبہِ عشق ہے اِک طرف ذاتِ اقدس کی تعظیم ہے

سامنے جلوہِ حسنِ مطلوب ہے پر نگاہیں اٹھانے کا یارا نہیں

 

ہم مسلماں بھٹک تو رہے ہیں مگر ، یا رسولِ خدا کیجئے در گزر

ہم کو ہے ناز جب آپ ہیں ناخدا تو خفا ہم سے کوئی کنارا نہیں

 

ماہتابِ ہدایت کی امت ہیں ہم جگمگائیں گے روزِ قیامت تلک

ظلمتیں دیکھ کر ٹوٹ جاتا ہے جو ، وہ ستارہ ہمارا ستارہ نہیں

 

ایک ساری کتابوں میں قرآن ہے ، ایک سارے رسولوں کا سلطان ہے

جب سے دنیا بنی ہے خدا نے کوئی ان سا ذیشاں زمیں پر اتارا نہیں

 

پاک روضہ مبارک کی جالی کا رنگ اور کملی کی عادل کرامت کا رنگ

چشمِ ایماں کی زینت ہوں یہ رنگ تو کوئی نظروں میں جچتا نظارہ نہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ