اردوئے معلیٰ

اشک آنکھوں میں لیے مَحوِ دعا ہوں میں بھی

اسی دربار سخاوت کا گدا ہوں میں بھی

 

عشق میں لوگ ہوئے مجنوں و فرہاد کئی

بن کے دیوانہ مدینے کو چلا ہوں میں بھی

 

میرے اللہ تجھے نسبتِ احمد ہے پسند

ان کا عاشق اے محمد کے خدا ہوں میں بھی

 

میں نہ صدیق و بلال و قرنی سا لیکن

جان و دل سے تو محمد پہ فدا ہوں میں بھی

 

میں وہاں ہوں جہاں میں عرش کا ہم پایہ ہوں

ان کی دہلیز کے منگتوں میں پڑا ہوں میں بھی

 

ذرہ ذرہ ہے محمد کے کرم سے روشن

ان کی رحمت کا طلب گار عطا ہوں میں بھی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات