اردوئے معلیٰ

Search

المدد ، محبوبِ ربِّ ذوالمنن

ہے یہ عصرِ نو نہایت پُر فتن

 

آپ ہیں تخلیقِ عالم کا سبب

آپ سے ہے رونقِ ہر انجمن

 

آپ سے ہے انشراحِ رُوح و دل

آپ سے ہے ارتباطِ جان و تن

 

ہے مبارک نُطقِ آنحضرت کا ذکر

ہیں مرے جذبات بھی گُل پیرہن

 

کثرتِ عصیاں کا ہو اب خوف کیا

اُن کا دریائے کرم ہے موجزن

 

لب پہ ہے مدح و ثنا کی روشنی

دل میں ہے عشق و اِرادت کی کرن

 

مصطفی کے چہرۂ پُرنور پر

سورۂ والشّمس کی دیکھو پھبن

 

نُورِ لطف و مرحمت سرکار کا

میرے جان و دل پہ ہے پرتوِ فگن

 

آپ کے انوار سے روشن ہوئے

شہر و دشت و وادی و کوہ و دمن

 

شہرِ طیبہ کی نسیمِ جاں فزا

ہے دماغوں کے لیے مُشکِ ختن

 

اسمِ پاکِ مصطفی کا فیض ہے

مٹ گئے محمودؔ کے رنج و محن

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ