’’ان کو دیکھا تو گیا بھول میں غم کی صورت‘‘

 

’’ان کو دیکھا تو گیا بھول میں غم کی صورت‘‘

دور اک پل میں ہوئی ظلم و ستم کی صورت

جب سے نظروں میں سمائی ہے حرم کی صورت

’’یاد بھی اب تو نہیں رنج و الم کی صورت‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ