اردوئے معلیٰ

اوجِ صدق و صفا سیّدی مصطفیٰ

 

اوجِ صدق و صفا سیّدی مصطفیٰ

سرورِ انبیأ سیّدی مصطفیٰ

 

حق کی منشأ وہی ، حق کا وہ فیصلہ

جو ہے تیری رضا سیّدی مصطفیٰ

 

کوئی بھی اُن کے در سے نہ خالی گیا

بحرِ جود و سخا سیّدی مصطفیٰ

 

مرتبہ اُن کے جیسا کسی کو ملا؟

مرحبا مصطفیٰ ، سیّدی مصطفیٰ

 

جو بھی اسوہ پہ تیرے چلا ، پاگیا

خلد کا راستہ سیّدی مصطفیٰ

 

چھا گئیں ظلمتیں ، ہر طرف ہے وبأ

دور ہو ابتلا ، سیّدی مصطفیٰ

 

وہ مرا رہبر و رہنما مرتضیٰؔ

میں ہوں جس کا گدا سیّدی مصطفیٰ

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ