اردوئے معلیٰ

اور کیا روز جزا دے گا مجھے

زندہ رہنے کی سزا دے گا مجھے

 

زخم ہی زخم ہوں میں داغ ہی داغ

کون پھولوں کی قبا دے گا مجھے

 

میں سمجھتا ہوں زمانے کا مزاج

وہ بنائے گا مٹا دے گا مجھے

 

بے کراں صدیوں کا سناٹا ہوں میں

کون سا لمحہ صدا دے گا مجھے

 

ٹوٹ کر لوح و قلم کی جاگیر

کوئی دے گا بھی تو کیا دے گا مجھے

 

میرے ہی خون میں نہلا کے شررؔ

وہ صلیبوں پہ سجا دے گا مجھے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات