اردوئے معلیٰ

اُن کے نغمے جو گانے لگتے ہیں

اپنی قسمت بنانے لگتے ہیں

 

گر تعاقب کرے کوئی مشکل

مجھ کو آقا بچانے لگتے ہیں

 

نعت سنتے ہی کچھ منافق لوگ

اپنے چہرے چھپانے لگتے ہیں

 

نیند میں جب درود پڑھتا ہوں

خواب طیبہ کے آنے لگتے ہیں

 

رشک آتا ہے حاجیوں پر ، جب

قافلے حج پہ جانے لگتے ہیں

 

یہ گھڑی دو گھڑی کا کام نہیں

نعت ہوتے زمانے لگتے ہیں

 

اُن کی رحمت برسنے لگتی ہے

اشک جب ہم بہانے لگتے ہیں

 

جب سے طیبہ میں آ بسا ہوں فدا

سارے موسم سہانے لگتے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات