اردوئے معلیٰ

اُن کے دَر پر قبول ہو جائیں

لفظ مِدحت کے پھول ہو جائیں

 

آرزُو ہے کہ ہم مدینے میں

اُن کی راہوں کی دھول ہو جائیں

 

ہم پہ رحمت کی اک نظر آقا

تا کہ ہم با اُصول ہو جائیں

 

دِل میں یہ بات آ کے بیٹھ گئی

ہم فدائے رسول ہو جائیں

 

اے صبا لوٹ کر بتا دینا

جب یہ نعتیں وصول ہو جائیں

 

نعت کے حَرف، حَرف میں آقا

مِرے جذبے حُلُول ہو جائیں

 

اے رضاؔ نعت ہی سُنا دینا

جب کبھی ہم ملول ہو جائیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات