آتا ہے جب بھی لفظِ محمدؐ اذان میں

 

آتا ہے جب بھی لفظِ محمدؐ اذان میں

میلاد ہونے لگتا ہے دل کے مکان میں

 

صورت کی اُنؐ کے سیرت و کردار کی کہیں

ملتی نہیں مثال کسی بھی جہان میں

 

حضرت حلیمہؓ آپ کی گودی کے لعل سا

دھرتی پہ تھا نہ کوئی کہیں آسمان میں

 

عشقِ رسولِ ہاشمی ﷺ کی ہے یہ بھی عطا

نعتیں سُنوں تو شہد ٹپکتاہے کان میں

 

خواہش ہے مسجدِ نبیؐ میں بیٹھ کر کبھی

لکھتا رہوں قصیدے میں آقاؐ کی شان میں

 

اِک عاشقِ رسولؐ کا بس یہ علاج ہے

ہو ذکر اُنؐ کا جان پھر آتی ہے جان میں

 

اشعرؔ درود اور ثنا کے طفیل ہی

تاثیر آگئی ہے ہماری زبان میں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

یا رب ترے محبوب کا جلوا نظر آئے
دلوں میں عشق احمد کو بسائے ایسی مدحت ہو
ان کے نام پاک پر مرجائیے
وہ اعلی و اولی ، ہمارے محمد
دِلا ہم کو محمد کی حمایت ہے تو کیا غم ہے
آنے والو یہ بناوؔ شہرِ مدینہ کیسا ہے
چمک چمک کے ستارے سلام پڑھتے ہیں
در جاں چو کر منزل، جانانِ ما محمد
خامشی ، غارِ حرا ، دِل میرا
اُنہی کا نور پھیلا ہے جدھر دیکھو جہاں دیکھو