آپ ہیں کبریا میرے مولا ہیں آپ

آپ ہیں کبریا میرے مولا ہیں آپ

آپ کا دان ہے ، میرے داتا ہیں آپ

 

میں غلامِ غلامانِ احمدؐ جو ہوں

ہے کرم آپ کا ، میرے آقا ہیں آپ

 

کوزہ گر آپ سا، ہے نہ ہوگا کبھی

چاک کن آپ کا ، کیا ہی دانا ہیں آپ

 

کاش ہو جاؤں میں عشقِ میں اب فنا

صاحبِ لم یزل، میری منشا ہیں آپ

 

کون ہے آپ کے سامنے مارے دم

مالکِ ملک بس ایک تنہا ہیں آپ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

ہر جگہ ہر نظر دیکھ سکتی نہیں ، تو حیات آفریں تو حیات آفریں
بے کیف ہے حیات ترے ذکر کے بغیر
مرے مولا کہتا رہوں سدا , تری شان جل جلالہ
میں تجھ کو دیکھ لوں اتنی تو زندگی دے دے
خدا کے سامنے سر کو جھکا دو
مکیں سارے خدا کے حمد گو ہیں، مکاں سارے خدا کے حمد گو ہیں
خدائے پاک کا مجھ پر کرم ہے
طوافِ خانہ کعبہ ترجماں ہے ایک مرکز کا
خدائے مہربان نگہِ کرم للّٰہ خدارا
خدا کا فیض جاری ہر جہاں میں