اردوئے معلیٰ

ایک سورج اُتر آیا ہے شبِ تام کے ساتھ

ایک سورج اُتر آیا ہے شبِ تام کے ساتھ

جب مؤذن نے پکارا ہے تجھے نام کے ساتھ

 

اذن و ایجاب کے مابعد قلم لکھتا ہے

نعت کے حرف عطا ہوتے ہیں انعام کے ساتھ

 

آپ کے اسمِ محمد کا ہے اعجازِ لطیف

بوسے لیتا ہُوں مَیں دو ، میم کے اِدغام کے ساتھ

 

شوق نے تھامے ہوئے ہیں ترے احساس کے خواب

رات آتی نہیں اب ہجر کے آلام کے ساتھ

 

پھر مہک اُٹھے ہیں دل میں تری تمدیح کے رنگ

پھر سے آتی ہے صبا مدحتِ گُلفام کے ساتھ

 

حرف ہو جاتے ہیں اِک جذب کی صورت میں ادا

نعت ہو جاتی ہے اِک صیغۂ الہام کے ساتھ

 

مجھ کو مقصودؔ مدینے سے خبر آئی ہے

ایک جھونکا سا چلا ہے کسی پیغام کے ساتھ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ