اردوئے معلیٰ

اے عشقِ نبی میرے دل میں بھی سما جانا

اے عشقِ نبی میرے دل میں بھی سما جانا

مجھ کو بھی محمد کا دیوانہ بنا جانا

 

جو رنگ کہ جامی پہ رومی پہ چڑھایا تھا

اس رنگ کی کچھ رنگت مجھ پہ بھی چڑھا جانا

 

قدرت کی نگاہیں بھی جس چہرہ کو تکتی ہیں

اس چہرہ انور کا دیدار کرا جانا

 

جس خواب میں ہوجائے دیدارِ نبی حاصل

اے عشق کبھی مجھ کو نیند ایسی سُلا جانا

 

دیدار محمد کی حسرت تو رہے باقی

جُز اس کے ہر اک حسرت اس دل سے مٹا جانا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ