اردوئے معلیٰ

Search

اے قاسمِ عطائے احد ! کیجیے مدد !

امت کو آن پہنچے رسد ! کیجیے مدد !

 

اے منظرِ جمالِ خدا ! دور ہو بلا !

اے مظہرِ جلالِ صَمَد ! کیجیے مدد

 

اے حامی و انیسِ غریباں ! نگاہِ لطف !

اب ظلم ہیں ورائے عدد کیجیے مدد

 

آقائے خضر ! عشق کو آبِ بقا مِلے !

ہو فسق اب سپردِ لحد ! کیجیے مدد

 

حالِ تباہ آپ سے کب ہے چھپا ہوا

اے منبعِ علوم و خرد ! کیجیے مدد !

 

دیں کی محافظت کے بجائے کچھ اہل علم

آپس میں کررہے ہیں حسد ، کیجیے مدد !

 

دستِ عدو سے آپ کے عشاق کا حضور !

ہوتا ہے اب تو قتلِ عمد کیجیے مدد !

 

فردوس میں جوار معظم کو چاہیے

اپنی رضا کی دے کے سند ! کیجیے مدد !

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ