اردوئے معلیٰ

’’بائیں رستے نہ جا مسافر سُن‘‘

 

’’بائیں رستے نہ جا مسافر سُن‘‘

تجھ پہ طاری ہے یہ کہاں کی دُھن

دُزدِ ایماں ہزار پھرتے ہیں

’’مال ہے راہ مار پھرتے ہیں ‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ