اردوئے معلیٰ

Search

با خدا بہرِ شفاعت نہ خزینے جوڑے

میں نے بس مدحِ پیمبر کے نگینے جوڑے

 

بالیقیں پائے گا رب سے وہ معافی کی سند

ہاتھ مجرم نے اگر جا کے مدینے جوڑے

 

بغضِ شیخین پہ کچھ بھی نہ ملے گا تجھ کو

جالیوں سے تو بھلے لاکھ بھی سینے جوڑے

 

اُن کے نوکر کی خریدی نہ گئی خاکِ قدم

ڈھیر دولت کے بہت تختِ شہی نے جوڑے

 

عرش کا ارضِ مدینہ سے تقابل کیسا

یہ اٹھاتی ہے ترے بارہ مہینے جوڑے

 

جن کے دل توڑ دیں مل کر یہ زمانے والے

ماہِ طیبہ انہیں بلوا کے مدینے جوڑے

 

وہ کسی بغض کے مارے سے نہ ٹوٹیں گے کبھی

جو بنائے ہیں مرے پاک نبی نے جوڑے

 

جس کو طوفان کی سختی کا تبسم ڈر ہو

کشتئِ آلِ محمد سے سفینے جوڑے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ