اردوئے معلیٰ

!بس ایک جلوے کا ہوں سوالی، جناب عالی

!بس ایک جلوے کا ہوں سوالی، جناب عالی

!پڑا ہے دامانِ چشم خالی، جناب عالی

 

ہماری آنکھوں کی حیرتیں ماند پڑ رہی ہیں

!دکھائیے کوئی چھب نرالی، جناب عالی

 

وہ آخری فیصلہ سنا کر ہوئے روانہ

!میں لاکھ چیخا جناب عالی! جناب عالی

 

پہاڑ چپ ہیں تو ان کو بے بس نا جانیئے گا

!پلٹ بھی سکتی ہے کوئی گالی، جناب عالی

 

مجھے محبت نے مار ڈالا، حضور والا

!اسے سزا دیجے سخت والی، جناب عالی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ