اردوئے معلیٰ

بہت تلاش کرے گا ترا سنگھار مجھے

جمالِ یار ترا آئینہ شکست ہوا

 

مقابلے پہ میں اپنے اتر نہیں پایا

کہ حوصلہ مری دہشت سے میرا پست ہوا

 

کہاں گئے ترے عشاقِ جاں نثار ، بتا

مجھے تو چھوڑ کہ میں تو ہوس پرست ہوا

 

پھر ایک اور مسافت کو بادبان کھلے

پھر ایک اور قیامت کا بند و بست ہوا

 

ہزار طرز سے دیتی رہی حیات صدا

مگر وہ شخص کہ جو خودکشی میں مست ہوا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات