اردوئے معلیٰ

بیٹھے ھیں چَین سے ، کہیں جانا تو ھے نہیں

ھم بے گھروں کا کوئی ٹھکانا تو ھے نہیں

 

تُم بھی ھو بیتے وقت کے مانند ہُو بہو

تُم نے بھی یاد آنا ھے ، آنا تو ھے نہیں

 

عہدِ وفا سے کس لیے خائف ھو ، میری جان

کرلو کہ تُم نے عہد نبھانا تو ھے نہیں

 

وہ جو ھمیں عزیز ھے ، کیسا ھے ، کون ھے

کیوں پوچھتے ھو ، ھم نے بتانا تو ھے نہیں

 

دُنیا ! ھم اھلِ عشق پہ کیوں پھینکتی ھے جال ؟

ھم نے ترے فریب میں آنا تو ھے نہیں

 

کوشش کریں تو لوٹ ھی آئے گا ایک دِن

وہ آدمی ھے ، گذرا زمانہ تو ھے نہیں

 

وہ عشق تو کرے گا مگر دیکھ بھال کے

فارس ! وہ تیرے جیسا دِوانہ تو ھے نہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات