اردوئے معلیٰ

Search

تُمہاری یاد کی خوشبُو لگائی تھی مَیں نے

تمام رات مرے جسم و جاں مہکتے رھے

 

سرُور ھِجر کے موسم میں بھی نہ ماند پڑا

حواس ضبط کے عالم میں بھی بہکتے رہے

 

دیارِ خواب میں کچھ طائرانِ خوش آواز

تمہارے آنے کی اُمید میں چہکتے رہے

 

نواحِ دل میں کئی روشنی بھرے سائے

وفورِ شوق سے گاتے رھے ، لہکتے رھے

 

مَیں تُم سے دُور تھا ، لیکن تُمہارے ہاتھ میں تھا

گذشتہ شب مَیں کسی اور کائنات میں تھا

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ