تمہیؐ سرور تمہیؐ ہو برگزیدہ یارسول اللہؐ

 

تمہیؐ سرور تمہیؐ ہو برگزیدہ یارسول اللہؐ

تمہیؐ ہو سب سے پہلے آفریدہ یارسول اللہؐ

 

قرارِ قلب و جاں ،میرا بھروسہ آپؐ ہی تو ہیں

مرا مسلک ، یقیں ، ایماں ، عقیدہ یارسول اللہؐ

 

نہیں اوقات میری حیطہء الفاظ میں لاؤں

ترےؐ اخلاق ، اوصافِ حمیدہ یارسول اللہؐ

 

کھڑا ہے دست بستہ سنگِ در پر اشکباری کو

تراؐ مغموم تیرؐا غم رسیدہ یارسول اللہؐ

 

ترےؐ دربار میں تیریؐ گلی میں، تیریؐ چوکھٹ پر

جبینِ دل رہے ہر پل خمیدہ یارسول اللہؐ

 

کریں گی ناز قرنوں اس کرم پر میری نسلیں بھی

اگر منظور ہو جائے قصیدہ یارسول اللہؐ

 

اسیرِ زُلف ہی رکھنا ہمیشہ اے کریمؐ ، اکرمؐ

نہ ہو اشفاقؔ زُلفوں سے رمیدہ یارسول اللہؐ

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

محبت کیجیے ربّ العلیٰ سے
تصوّر آپؐ کا میں نے دِل و جاں میں اُتارا ہے
متاعِ زیست کا ہر پل سعید کرتا ہُوں
محبوبِ ربِّ انس و جاں میرے حضورؐ ہیں
جب شعر ہُوا اسمِ محمد سے مُرصّع
چراغِ عقیدت کو دل میں جلا کر
بوسۂ نُور کی تخلید ہے، سنگِ اسوَد
مر بھی جائے تو تری بات سے جی اُٹھتا ہے
مقصودِ دعا قلب پہ ظاہر ہوا جب سے
ہوجائے میری حاضری طیبہ نصیب سے