تو ہی حل کر دے خدایا مسئلہ کشمیر کا

کشمیر

 

تو ہی حل کر دے خدایا مسئلہ کشمیر کا

ختم ہو اب جلد قصہ ظلم کی شمشیر کا

 

کربلا کی یاد دل میں پھر سے تازہ ہو گئی

برسر قرطاس لکھا نام جب کشمیر کا

 

ظلم کا تختہ الٹنے کے لئے کشمیریو

لو سہارا انقلاب حضرت شبیر کا

 

ایک دن آزاد ہوگا دیکھنا کشمیر بھی

کیا نہیں رشتہ جڑا ہے خواب سے تعبیر کا؟

 

ہر ورق تصویر کے ہمراہ تھا اخبار میں

پر کوئی صفحہ نہ تھا مظلوم کی تصویر کا

 

آہ! پھر بحرین و کشمیر و فلسطین و یمن

ہے ہدف ان میں میں سے ہر اک عالم تکفیر کا

 

مدعئ امن عالم جانب کشمیر دیکھ

روز اٹھتا ہے جنازہ یاں جوان و پیر کا

 

تو قلم سے لکھ خلاف ظلم و جور ظالماں

کچھ نہ کچھ ہوگا اثر نوری تری تحریر کا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ