اردوئے معلیٰ

Search

تیری رحمت سے قلم مجھ کو عطا ہو جانا

میرے لفظوں کا مقدّر تھا ثنا ہو جانا

 

تیری نسبت سے مجھے درد عطا ہو جانا

درد بھی وہ کہ ہر اک دکھ کی دوا ہو جانا

 

درد و آلام کے تپتے ہوئے صحرا میں سدا

تیری یادوں کا مرے سر پہ ردا ہو جانا

 

میں کہ مشغول رہا ہوں تری مدحت میں مدام

میری کج فکر کا یوں فکرِ رسا ہو جانا

 

تیری یادوں سے چراغاں سرِ مژگاں کرنا

تیرے جلووں میں خوشا محوِ لقا ہو جانا

 

میری سانسوں میں سلاموں کی مہک کا بسنا

میری دھڑکن کا درودوں کی صدا ہو جانا

 

یہ کرشمہ ہے ترے اسمِ گرامی کا شہا

نام لیتے ہی مصائب کا ہوا ہو جانا

 

کاش نوری کے مقدر میں یہ لکھا جائے

تیری دہلیز پہ بے نام فدا ہو جانا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ