اردو معلی copy
(ہمارا نصب العین ، ادب اثاثہ کا تحفظ)

تیری مدحت تیری حمد بیان کروں میں کب ہے ممکن

 

تیری مدحت تیری حمد بیان کروں میں کب ہے ممکن

میں محدود دماغ کا حامل کب یہ مجھ میں تاب و تواں ہے

 

تو ہے احد اور میںہوں کثرتِ خلق کا جزو اے میرے خالق

تیری ذات حقیقت ہے اور میری ہستی ایک گماں ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

یا رب عظیم ہے تو
دُور کر دے مرے اعمال کی کالک‘ مالک!
نشاں اسی کے ہیں سب اور بے نشاں وہ ہے
مرا ستّار ہے، میرا خُدا ہے
دیکھوں جدھر بھی تیرا ہی جلوہ ہے رُو برُو
کرے انساں جو انساں سے بھلائی
خدا کے نُور سے روشن جہاں ہیں
عظیم المرتبت ربّ العلیٰ عظمت نشاں ہے
معظم ہے خدا ہی محترم ہے
مرا وردِ زباں اللہ اکبر