تیری مدحت تیری حمد بیان کروں میں کب ہے ممکن

 

تیری مدحت تیری حمد بیان کروں میں کب ہے ممکن

میں محدود دماغ کا حامل کب یہ مجھ میں تاب و تواں ہے

 

تو ہے احد اور میںہوں کثرتِ خلق کا جزو اے میرے خالق

تیری ذات حقیقت ہے اور میری ہستی ایک گماں ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ