’’تیری نسلِ پاک میں ہے بچّہ بچّہ نوٗر کا‘‘

 

’’تیری نسلِ پاک میں ہے بچّہ بچّہ نوٗر کا‘‘

تیرے صدقے پا لیا سب نے خزیٖنہ نوٗر کا

ہر گلِ تر نوٗر کا ہر ذرّہ ذرّہ نوٗر کا

’’تُو ہے عینِ نوٗر تیرا سب گھرانا نوٗر کا‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

’’نور کے ٹکڑوں پہ اُن کے بدر و اختر بھی فدا‘‘
صد رشکِ کائنات محمد ﷺ کی ذات ہے
صبا مکہ میں ہدیہ اس کا جا کر پیش کردینا
دل سے تم عزت محمد ﷺ کی کرو
حضور آپ کا گھر حاصل زمان ومکاں
کب تک یہ مصیبتیں اُٹھائے اسلام
دل میں سرکارؐ کی محبت ہے
نبیؐ کے عشق میں مسرُور رہنا
مریضِ عشق کو سرکارؐ کا دیدار ہو جائے
جبیں میری ہے اُنؐ کا آستاں ہے