اردوئے معلیٰ

 

تیرے بندوں کے خدا، خود پر ستم اپنی جگہ

قادر مطلق ہے تو تیرا کرم اپنی جگہ

 

ہے سعادت یہ مجھے کہتا ہوں میں حمد و ثنا

میں تو خود میں مست ہوں، میرا قلم اپنی جگہ

 

روز محشر کیسے آؤں گا، میں تیرے سامنے

یہ ہے غم اپنی جگہ دنیا کے غم اپنی جگہ

 

طالب رحم و کرم، بندے ترے روتے ہیں ہم

اپنی اُمت کے لیے شاہِ اُمم اپنی جگہ

 

ہو خطا مجھ سے کوئی، آخر خدا آدم ہے گل

درگزر ٹھہری عطا، تیرا کرم اپنی جگہ

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات