اردوئے معلیٰ

Search

جانِ جہاں کے دم سے ہی دم ہے رگِ حیات میں

قلب ہیں میرے مصطفیٰ سینۂِ کائنات میں

 

جب سے نجومِ نعت ہیں چمکے تخیلات میں

تب سے تصورات ہیں ڈوبے تجلیات میں

 

خوفِ سقوطِ چاہ کیا ؟ حاجتِ خضرِ راہ کیا ؟

قبلہ تِری نگاہ کا دِکھتا ہے شش جہات میں

 

پھولوں میں ہے مہک تِری ، تاروں میں ہے چمک تِری

چہرے کا نور دن میں ہے ،زلفوں کا رنگ رات میں

 

کعبۂِ حُسن ہے تِرا ابروئے حق نما شہا !

مَجمَعِ نُور کی نماز تیرے تصورات میں

 

روحِ معانی و حروف ! تیری تو ذات ہے تِری

سکّہ تِرے غلام کا چلتا ہے ادبیات میں

 

قطعِ بتانِ آزری ، فیضِ خلیل تجھ سے ہے

تیرا ہی بت شکن تھا جو آیا تھا سومنات میں

 

کس کی کمندِ حرف کی زَد میں ہے نعت آسکی

کون ہے جو کہے کہ وہ ، مثلِ خدا ہے بات میں

 

دامنِ چشمِ خاصِ حق اس کو دے تا ابد پناہ

آیا جو لمحہ بھر تِرے سایۂ التفات میں

 

قلبِ مُعَظمؔ حضور ! بخش دے ! شانۂِ یقین

زلفِ خیالِ دورِ ما ، اُلجھی تَوَہُّمات میں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ