’’جان و دل ہوش و خرد سب تو مدینے پہنچے‘‘

 

’’جان و دل ہوش و خرد سب تو مدینے پہنچے‘‘

اُن کے احسان سے طیبہ کو سفینے پہنچے

جسم ہے ہند میں طیبہ کو دل و جان گیا

’’تم نہیں چلتے رضاؔ سارا تو سامان گیا‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ