اردوئے معلیٰ

Search

جب ترا عکس تخیل کی ردا تک آئے

گنگناتی ہوئی صحرا میں صبا تک آئے

 

تجھ کو جب یاد کیا اتنی پذیرائی ملی

پھول ہی پھول مرے دست دعا تک آئے

 

اے مری پہلی محبت ترے پندار کی خیر

ہم تری کھوج میں نکلے تو خدا تک آئے

 

پہلے چاہا تھا کسی عکس کو اک دوری سے

پاس جب آئے تو پھر اس کی صدا تک آئے

 

تیری آواز نے خوابوں میں پکارا ہم کو

اس تعاقب میں ہی ہم کوہ ندا تک آئے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ