اردوئے معلیٰ

Search

جن کو نبی کی ذات کا عرفان مل گیا

دارین میں نجات کا سامان مل گیا

 

ان پر نثار میں مرے اہل و عیال سب

جن کے کرم سے تحفۂ ایمان مل گیا

 

شکرِ خدا، کتابِ الٰہی کے ساتھ ساتھ

خوش ہوں کہ عشقِ صاحبِ قرآن مل گیا

 

جس کو درِ رسول پہ آئی اجل ، اُسے

اس نسبتِ رسول کا فیضان مل گیا

 

سب کچھ درِ رسول کی نسبت کا فیض ہے

ہم عاصیوں کو مژدۂ غفران مل گیا

 

نازاں ہیں ہم غلامیٔ آقا پہ اس لیے

اس فرش پر ،وہ عرش کا مہمان مل گیا

 

میں تو سراپا شکر ہوں عبدِ جلیل ہوں

مجھ بے نوا کو زیست کا سامان مل گیا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ