اردوئے معلیٰ

Search

جو بوریا نشین ہے دشتِ حجاز کا

وہ رمزداں ہے کُن کی نوا ہائے ساز کا

محرم ہے وہ مظاہرِ فطرت کے راز کا

اُنگلی سے موڑ لائے وہ لمحہ نماز کا

جس وقت چاہے کھینچ لے باگیں سحاب کی

اُس کی گرفت میں ہیں رگیں آفتاب کی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ