اردوئے معلیٰ

جو تیرے قرب میں پھولوں کی طرح راحتِ جاں تھے

وہی لمحے پلٹ کر آج میرے دل کو ڈستے ہیں

لبِ شیریں سے جوئے شیر کو نسبت ہے بس اتنی

وہی محبوب منزل ہے وہی پُر پیچ رستے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات