اردوئے معلیٰ

جو حقِ ثنائے خدائے جہاں ہے

جو حقِ ثنائے خدائے جہاں ہے

زبان و دہاں میں وہ طاقت کہاں ہے

 

لکھوں وصف کیا اپنے منعم خدا کا

کیا اس نے انعام و احسان کیا کیا

 

عدم سے کیا اس نے موجود ہم کو

دیا خلعتِ زندگانی عدم کو

 

عطا کر کے علم و خرد ، فہم و بینش

بشر کو کیا زیورِ آفرینش

 

کہاں تک کرے کوئی نعمت شماری

کہاں تک کرے کوئی اوصافِ باری

 

کرے کوئی تشریح و تفصیل کیا کیا

کہ عاجز ہے یاں عقلِ تشریح پیرا

 

بھلا کس کو مقدورِ حمدِ خدا ہے

تحیر تحیر تحیر کی جا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ