اردوئے معلیٰ

Search

جو مجھ سے خطا کار و زیاں کار بھی ہوں گے

وہ آپ کی رحمت کے طلبگار بھی ہوں گے

 

جو آپ کی فرقت میں شب و روز ہیں گریاں

عشّاق وہی طالبِ دیدار بھی ہوں گے

 

وہ جن کی رسائی ہے درِ فیض رساں تک

وہ عشق و محبت میں گرفتار بھی ہوں گے

 

جو گنبدِ خضریٰ کی طرف دیکھ رہے ہیں

وہ لطف و عنایت کے سزاوار بھی ہوں گے

 

سرکار لکھائیں گے اُنھیں نعت خود اپنی

جو اُن کے ثنا خوان و قلمکار بھی ہوں گے

 

محشر کا نہیں خوف کہ واں آقا و مولا

محبوبِ خدا شافع و غم خوار بھی ہوں گے

 

سرکار کی گلیوں میں ظفرؔ خیزاں و اُفتاں

کچھ صاحبِ دل، صاحبِ اسرار بھی ہوں گے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ