جو ہے میرے مصطفیٰ کا راستہ

جو ہے میرے مصطفیٰ کا راستہ

ہے وہی قربِ خدا کا راستہ

 

مصطفیٰ کے نام میں ہے وہ اثر

روک دیتا ہے بلا کا راستہ

 

مصطفیٰ کی یاد ٹھنڈی چھاؤں ہے

کیوں تکوں بادِ صبا کا راستہ

 

شہر آقا کی طرف جاتا ہو جو

ہے وہی پیاسی گھٹا کا راستہ

 

رحمت آقا سہارا دے مجھے

آگیا کوہ ندا کا راستہ

 

اب تو اپنا اے تھکی انسانیت

مصطفیٰ کے نقشِ پا کا راستہ

 

جس کو اپنایا ہے میں نے اے مجیبؔ

ہے علی مشکل کشا کا راستہ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

کوئے رشکِ ارم کا ارادہ کروں
یقیں میں ڈھلتا نہیں ممکنات کا پرتَو
آنکھ کو چھُو کے پسِ حدِ گماں جاتی ہے
ذکرِ رحمتِ مآب ہو جائے
اٹھانا ہے جو برکت زندگی بھر
میرے آقا مدینہ بلا لو میرے دل کی یہی التجا ہے
نازِ کبریا ہے تو فخر انبیاء ہے تو
آپ سے مہکا تخیل آپ پر نازاں قلم ا ے رسول محترم
عرض یا رب قبول ہو جائے
لب کو ذکرِ حضور ملٍتا ہے

اشتہارات