اردوئے معلیٰ

’’جہاں کی بگڑی اسی آستاں پہ بنتی ہے‘‘

 

’’جہاں کی بگڑی اسی آستاں پہ بنتی ہے‘‘

ہر اک کو نعمتِ دارین اُن سے ملتی ہے

جو ان کے در پہ مِٹوں کام یاب ہو جاؤں

’’میں کیوں نہ وقفِ درِ آں جناب ہو جاؤں ‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ