اردوئے معلیٰ

حرف نادم ہوئے بیاں ہوکر

حرف نادم ہوئے بیاں ہوکر

راز حیران ہیں عیاں ہو کر

 

دھند آنکھوں میں آن اتری ہے

دید اڑنے لگی دھواں ہو کر

 

میں تری ذات سے نہیں نکل پایا

تو نہیں چھپ سکا نہاں ہو کر

 

میں نہیں اب کسی گمان میں بھی

میں کہ اب رہ گیا گماں ہو کر

 

میرا ہم عمر اک بڑھاپا بھی

میرے ہمراہ ہے جواں ہو کر

 

ایک کردار کی تلاش میں میں

رہ گیا آپ داستاں ہو کر

 

کیا کروں جب مکان بھی کجھ سے

پیش آتا ہے لامکاں ہو کر

 

میں چلو خاک زاد ہوں، پر تم

مطمئن ہو نہ آسماں ہو کر

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ