اردوئے معلیٰ

Search

حق تعالیٰ ہی نے بخشا نعت کہنے کا شعور

ورنہ میری کیا حقیقت اور میرا کیا شعور

 

آپ جب آئے چراغِ آگہی روشن ہوئے

آپ کی آمد نہیں ہوتی تو کیا آتا شعور

 

جا بہ جا سرکار کے جلوے ہی جلوے دیکھیے

دل کی آنکھیں چاہئیں کیسا شعور و لاشعور

 

آپ کے آنے سے پہلے بے شعوری عام تھی

آپ کی آمد سے انساں میں ہوا پیدا شعور

 

حشر میں بھی نعت ہی پہچان بن جائے مری

ہو عطا ایسا مجھے بھی اے شہِ بطحا شعور

 

آپ کے اوصاف لفظوں میں بیاں کیسے کروں

آپ کی مدحت میں عاجز ہی رہا میرا شعور

 

اُستوانہ آپ کی فرقت میں روتا ہی رہا

آپ کی قربت سے اُس بے جاں میں بھی اُبھرا شعور

 

نعت خوانی بھی عبادت ہے ادب سے کیجیے

مجھ سے کہتا ہے یہی ہر شعر پر میرا شعور

 

لاکھ الفاظِ چنیدہ سے کہی نعتِ نبی

پھر بھی خاکیؔ اس چمن میں خاک ہی ٹھہرا شعور

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ