اردوئے معلیٰ

Search

خاکِ پائے شہِ مدینہ ہو

خوش نصیبوں کا یہ خزینہ ہو

 

جو گدائے شہِ مدینہ ہو

کیوں طلب گارِ طورِ سینا ہو

 

نعتِ محبوب لب پہ جاری ہو

زندگی کا یہی قرینہ ہو

 

زندگی ختم ہو درِ محبوب

حجِّ اکبر کا جب مہینہ ہو

 

مشک و عنبر کی کیا ضرورت ہے

میرے آقا کا گر پسینہ ہو

 

یادِ محبوب میں ہی بیتے زیست

وارثیؔ جینا ایسا جینا ہو

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ