اردوئے معلیٰ

Search

خدا کا فضل ہے جو لب پہ جاری ان کی مدحت ہے

یہی بس اک وسیلہ ہے کہ ہر سو میری عزت ہے

 

رقم جتنی بھی نعتیں میں نے کی ہیں آج تک اے دل

ثنا گوئی کا صدقہ ہے یقینی قصرِ جنت ہے

 

"مرے ’’لب پر ہر اک لمحہ فقط حرفِ صداقت ہے ‘‘

کرم اللہ کا ہے اور شہِ دیں کی عنایت ہے

 

وہاں شاہ و گدا کاسہ بکف جاتے ہمیشہ ہیں

رواں ہر وقت رہتا ان کا دریائے سخاوت ہے

 

ترے دربار کی رعنائیاں آکر کبھی دیکھے

دلِ زاہدؔ میں اے شاہ ِ زمن کب سے یہ حسرت ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ