خدا کے نام سے ہی ابتدا ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے

خدا کے نام سے ہی ابتدا ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے

خدا کا ذکر، ذکرِ جانفزا ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے

 

خدائے پاک ربُّ العالمیں ہے، محمدؐ رحمۃ اللعالمیں ہے

حبیب اللہ محبوبِ خداؐ ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے

 

خدا فرمائے اور ساری خدائی، فزوں تر ہو مقامِ مصطفائی

مرا بھی یہ وظیفہ برملا ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے

 

عطا اللہ نے کی اُنؐ کی محبت، سکھائی آپؐ نے اللہ کی مِدحت

عطائے کبریا و مصطفیٰؐ ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے

 

خدا کے آخری پیغام بر ہیں، خدا کے آپؐ منظورِ نظر ہیں

تعلق با خدا محکم سدا ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے

 

مرے لب پر درُودوں کی صدا ہےمرا منشور عشقِ مصطفیٰؐ ہے

خدا کی بندگی بھی بے ریا ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے

 

درِ سرکارؐ پر فضل خدا ہے، یہاں پر سائلوں کا جم گھٹا ہے

ظفرؔ بھی آپؐ کے در کا گدا ہے، خدائے مصطفیٰؐ میرا خدا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

مقدور ہمیں کب ترے وصفوں کی رقم کا
اللہ ! تو رَحْمٰنُ و رحِیْمْ
لبِ ازل کی صدا لَا اِلٰہ اِ لّا اللہ
میرے اشکوں میں مری فریاد، دل برسائے گا
حوالہ ہے وہ عفو و درگزر کا
خدا کا شُکر کرتا ہوں، خدا پر میرا ایماں ہے
خدا اعلیٰ و ارفع ہے، خدا عظمت نشاں ہے
حرم کے سائے میں سارے مسلماں رُوبرو بیٹھیں
خدا کے حمد گو جنگل بیاباں
جو احکامِ خدا سے بے خبر ہے