اردوئے معلیٰ

Search

خوش بخت ہوں کہ لب پہ محمد کا نام ہے

اس واسطے لبوں پہ ثنا صبح و شام ہے

 

قلب و نظر کو میرے یہی بات دے سکوں

ان کی عطا سے ہاتھ میں کوثر کا جام ہے

 

اقرا کے لفظ سے یہ کھلا راز دہر میں

اے حاملِ کتاب تو سب کا امام ہے

 

جس کی نظر میں آپ کی ناموس کچھ نہیں

اس رو سیاہ شخص پہ جنت حرام ہے

 

پڑھتا ہے جو درود محبّت سے مستقل

دونوں جہاں میں لائقِ صد احترام ہے

 

زاہدؔ کا نام ان میں ہو شامل مرے خدا

مدحت نبی کی کرنا فقط جن کا کام ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ