درد سا پہلو میں ہے اور دل میں ہلکی سی خلش

درد سا پہلو میں ہے اور دل میں ہلکی سی خلش

ہم نشیں یہ تو بتا آخر مجھے کیا ہو گیا

دیکھنا بیگانگیٔ اہلِ عالم دیکھنا

وہ جدا جب سے ہوئے دشمن زمانہ ہو گیا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ