اردوئے معلیٰ

 

درِ حبیب پہ رکھے خدا، گدا مجھ کو

میں کیا سے کیا ہوا، آخر تو ہے فنا مجھ کو

 

خدا کے بعد ہے اک آسرا ترا مجھ کو

میں خود کو بھول بھی جاؤں، نہ بھولنا مجھ کو

 

جہان ایک ہی سجدہ میں مل گیا مجھ کو

شعور آپ نے اتنا تو دے دیا مجھ کو

 

مری حیات پہ برسے ہیں جذب کے بادل

حب احمد کا بڑا ایک ہے دعویٰ مجھ کو

 

لبوں پہ دیکھنا اعزاز گل مدینے میں

نظر تو آئے کوئی ایک نقش پا مجھ کو

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات