اردوئے معلیٰ

Search

دو عالم کا امداد گار آ گیا ہے

امین آ گیا غم گسار آ گیا ہے

 

غریبوں کی جاں کو، یتیموں کے دل کو

سکوں ہو گیا ہے، قرار آ گیا ہے

 

اصول محبت ہے پیغام جس کا

وہ محبوب پروردگار آ گیا ہوں

 

اب انساں کو انساں کا عرفان ہوگا

یقیں ہو گیا ، اعتبار ہو گیا ہے

 

بجھے گا نہ جس کا چراغ محبت

وہ پیغمبر ذی وقار آ گیا ہے

 

زمانے کو اب اپنی منزل مبارک

رسولوں کا اب سردار آگیا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ