اردوئے معلیٰ

دُعا ہے سب نقابِ رُخ اُٹھا دیں

مجھے بھی جلوئہ زیبا دِکھا دیں

 

مِرے گھر میں اُجالے آ بسیں گے

ذرا سا آپ آ کر مُسکرا دیں

 

طلب بھی ہے عطا ہو جام ساقی!

ذرا سا ہی سہی لیکن پِلا دیں

 

تڑپتے ہیں جو رنج و غَم کے مارے

مسیحائی کریں اُن کو شِفا دیں

 

بنو گے جنتی تم بھی رضاؔ جی

یہ مُثردہ تو کبھی آ کر سُنا دیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات