دِوانو! جشن مناؤنبی کی آمد ہے

دِوانو! جشن مناؤ نبی کی آمد ہے

جہاں میں دھوم مچاؤ نبی کی آمد ہے

 

غمِ حیات کو تسکینِ دائمی حاصل

خوشی کے دیپ جلاؤ نبی کی آمد ہے

 

خدا کی نعمتیں بھی بٹ رہی ہیں دنیا میں

سبھی کو مکے بلاؤ نبی کی آمد ہے

 

جلوسِ جشنِ ولادت میں ہیں ملائک بھی

غلامو! جھومتے جاؤ نبی کی آمد ہے

 

چمن ، چمن میں بہاریں نئی ، نئی رونق

نگر ، نگر کو سجاؤ نبی کی آمد ہے

 

جگہ ، جگہ پہ درود و سلام کے نغمے

نبی کے نعرے لگاؤ نبی کی آمد ہے

 

سجی ہے محفلِ جشنِ نبی رضاؔ آؤ

نبی کی نعت سناؤ نبی کی آمد ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

شــیوہ عـــفو ہــو ، پیـــمانہ سالاری ہـــو
مشکلوں میں پکارا کرم ہی کرم
فاصلوں کو تکلف ہے ہم سے اگر ، ہم بھی بے بس نہیں ، بے سہارا نہیں
تمہیؐ سرور تمہیؐ ہو برگزیدہ یارسول اللہؐ
اگر میں عہد رسالت ماب میں ہوتا
جان ہیں آپؐ جانِ جہاں آپؐ ہیں
ہر موج ہوا زلف پریشانِ محمدؐ
رشکِ ایجاب تبھی حرفِ دعا ہوتا ہے
قصہء شقِّ قمر یاد آیا​
ہم گداؤں بے نواؤں کا سہارا آپ ہیں

اشتہارات