اردوئے معلیٰ

دیکھنے والوں نے کیا کیا نہ کرشمہ دیکھا

دیکھنے والوں نے کیا کیا نہ کرشمہ دیکھا

نور میں ڈوبا ہوا شہر مدینہ دیکھا

 

آپ کی یاد میں روتی ہوئی آنکھیں پائیں

آپ کے ہجر میں جلتا ہوا سینہ دیکھا

 

جیسے شبیرؓ نے اسلام کو جاں بخشی ہے

تم نے دنیا میں کہیں ایسا نواسہ دیکھا

 

زندگی اُن کی بتائی ہوئی رہ پر ڈالی

اپنی بخشش کا فقط ایک ذریعہ دیکھا

 

پھر اسے دونوں جہانوں میں فدا خیر ملی

جِس کسی نے بھی حضور آپ کا اسوہ دیکھا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ