دیکھیے اہل محبت ہمیں کیا دیتے ہیں

دیکھیے اہل محبت ہمیں کیا دیتے ہیں

کوچۂ یار میں ہم کب سے صدا دیتے ہیں

روز خوشبو تری لاتے ہیں صبا کے جھونکے

اہل گلشن مری وحشت کو ہوا دیتے ہیں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

تیری تصویر بنائے گا تو چھا جائے گا
دل کے بہلانے کو سامان بہت رکھا ہے
سرورِ قلب و جاں ہے، ربِ ہست و بُود تُو ہی تُو
میانِ قعرِ دریا جس نے اللہ کو پُکارا ہے
اگر ہے جستجو رب کی رضا کی
خدا ہی دل رُبا و دل نشیں ہے
رحیم و مہرباں میرا خدا ہے
جو دل ذکرِ خدا سے ہر گھڑی معمُور ہوتا ہے
خدا کی یاد سینے میں سمائے
خدایا اِک ترا مسکین بندہ