اردوئے معلیٰ

Search

ذِکرِ رسولِ پاک سے ہے در کُھلا نجات کا

فضلِ خدا سے مل گیا یہ راستہ نجات کا

 

نامِ حضور کے سبب دُور ہُوئے عذاب سب

جاری رہے گا تا ابد یہ سلسلہ نجات کا

 

باتیں مرے حضور کی باعثِ علم و آگہی

شوق و ادب سے کیجئے یہ تذکرہ نجات کا

 

کشتی نبی کی آل ہے اصحابِ مصطفیٰ نُجوم

آقا نے یہ بتادیا ہم کو پتا نجات کا

 

عشقِ حضور کے دِیے قبر میں لے کے جائیے

پُوچھئے سچ تو ہے یہی اِک آسرا نجات کا

 

شافعِ روز حشر نے کام ہی سب بنا دئیے

اپنے کرم سے شاہ نے مُژدہ دِیا نجات کا

 

طیبہ کی سر زمین پر مرزا کا ہو جو مستقر

پھر تو کرم سے پائے گا یہ مُدّعا نجات کا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ