اردوئے معلیٰ

Search

روشنی دل میں وہ سمو لے گا

یا نبی یا نبی جو بولے گا

 

وُہ جہاں میں بھٹک نہیں سکتا

آپ کا دل سے جو بھی ہو لے گا

 

دید اُن کی اُسے مُیسّر ہو

آنسوؤں سے جو دل بھگو لے گا

 

وہ بلائیں گے پھر مدینے میں

ان کی فرقت میں جو بھی رولے گا

 

دیکھ لے جو بھی گنبدِ خضری

وہ گناہوں کو اپنے دھو لے گا

 

سرخرو وہ سدا رہے زاہدؔ

ان کے رستے پہ جو بھی ہولے گا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ